ڈینگی کیا ہے؟ اس سے کیسے بچا جائے

اقوام متحدہ کے ادارے برائے صحت نے متنبہ کیا ہے کہ اگر حکومتوں نے ضروری اقدامات نہیں کیے تو ڈینگی سے دنیا کی ڈھائی ارب آبادی کو خطرہ لاحق ہے۔ پہلی بار انیس سو پچاس میں ڈینگی منظر عام پر آیا تھا تھائی لینڈ اور فلپائن اور اس کے بعد اب دنیا کے مختلف حصوں میں پھیلتا چلا گیا۔

ورلڈ اور دنیا بھر میں تقریبا ہر سال پانچ کروڑ افراد ڈینگی بخار کا شکار ہوتے ہیں اور سالانہ تقریبا 20 ہزار افراد اس کی وجہ سے اپنی جان سے ہاتھ دھوبیٹھتے ہیں۔

ایک اندازے کے مطابق دنیا کی تقریبا سو ممالک ہیں جن میں ڈینگی وائرس ہے اور یہ 38 اقسام کے مچھروں کی وجہ سے پایا جاتا ہے جن میں سے پاکستان میں صرف ایک قسم کا مچھر پایا جاتاہے۔پاکستان میں ڈینگی سے تقریبا پچھلے چار سالوں میں پچاس ہزار افراد متاثر ہوئے اور ان میں سے ایک سو سات افراد اس کی وجہ سے موت کے منہ میں چلے گئے

اور سال2019 میں اب تک تقریباً 11000 افراد ڈینگی کا شکار ہیں جن میں زیادہ افراد کا تعلق پنجاب سے ہے۔اور 2000 افراد سندھ میں ڈینگی کا شکار ہیں۔

 

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.


*